July 23, 2024

اردو

اردو

زبور 115- حقیقی خُدائے واحد

حقیقی خُدائے واحد - خُدا ہماری کُمک ہے - Zaboor 115 - زبور 115

ہم کو نہیں! اَے خُداوند! ہم کو نہیں

بلکہ تُو اپنے ہی نام کو

اپنی شفقت اور سچّائی کی خاطِر جلال بخش۔

قَومیں کیوں کہیں

اب اُن کا خُدا کہاں ہے؟

ہمارا خُدا تو آسمان پر ہے۔

اُس نے جو کُچھ چاہا وُہی کِیا۔

اُن کے بُت چاندی اور سونا ہیں

یعنی آدمی کی دست کاری۔

اُن کے مُنہ ہیں پر وہ بولتے نہیں۔

آنکھیں ہیں پر وہ دیکھتے نہیں۔

اُن کے کان ہیں پر وہ سُنتے نہیں۔

ناک ہیں پر وہ سُونگھتے نہیں۔

اُن کے ہاتھ ہیں پر وہ چُھوتے نہیں۔

پاؤں ہیں پر وہ چلتے نہیں

اور اُن کے گلے سے آواز نہیں نِکلتی۔

اُن کے بنانے والے اُن ہی کی مانِند ہو جائیں گے۔

بلکہ وہ سب جو اُن پر بھروسا رکھتے ہیں۔

اَے اِسرائیؔل! خُداوند پر توکُّل کر۔

وُہی اُن کی کُمک اور اُن کی سِپر ہے۔

10۔ اَے ہارُوؔن کے گھرانے! خُداوند پر توکُّل کرو۔

وُہی اُن کی کُمک اور اُن کی سِپر ہے۔

11۔ اَے خُداوند سے ڈرنے والو! خُداوند پر توکُّل کرو۔

وُہی اُن کی کُمک اور اُن کی سِپر ہے۔

12۔ خُداوند نے ہم کو یاد رکھّا۔ وہ برکت دے گا۔

وہ اِسرائیؔل کے گھرانے کو برکت دے گا۔

وہ ہارُوؔن کے گھرانے کو برکت دے گا۔

13۔ جو خُداوند سے ڈرتے ہیں کیا چھوٹے کیا بڑے

وہ اُن سب کو برکت دے گا۔

14۔ خُداوند تُم کو بڑھائے۔

تُم کو اور تُمہاری اَولاد کو۔

15۔ تُم خُداوند کی طرف سے مُبارک ہو

جِس نے آسمان اور زمِین کو بنایا۔

16۔ آسمان تو خُداوند کا آسمان ہے

لیکن زمِین اُس نے بنی آدم کو دی ہے۔

17۔ مُردے خُداوند کی سِتایش نہیں کرتے

نہ وہ جو خاموشی کے عالم میں اُتر جاتے ہیں

18۔ لیکن ہم اب سے ابد تک

خُداوند کو مُبارک کہیں گے۔

خُداوند کی حمد کرو۔

آمین!

RELATED ARTICLES