July 14, 2024

اردو

اردو

کیا خُدا نے اپنے اکلوتے بیٹے کی موت کی خواہش رکھی؟

کیا خُدا نے اپنے اکلوتے بیٹے کی موت کی خواہش رکھی؟ - مسیح کی دردناک موت

کیا خُدا نے اپنے اکلوتے بیٹے کی موت کی خواہش رکھی؟

یسوع مسیح کی پرتشدد موت بیرونی دردناک حالات کے ذریعے واقع نہیں ہوئی۔

اعمال 2 باب 23 آیت: ” جب وہ خُدا کے مُقرّرہ اِنتِظام اور عِلمِ سابِق کے مُوافِق پکڑوایا گیا تو تُم نے بے شرع لوگوں کے ہاتھ سے اُسے مصلُوب کروا کر مار ڈالا “۔

تاکہ ہم گنہگاروں اور موت کے غلاموں کو زندگی مل سکے۔ باپ جو آسمان کی بادشاہی میں ہے اُس نے اُنہیں ہمارے واسطے گناہ ٹھہرایا جو گناہ سے واقف نہ تھا۔

2 کُرنتھیوں 5 باب 21 آیت: ” جو گُناہ سے واقِف نہ تھا اُسی کو اُس نے ہمارے واسطے گُناہ ٹھہرایا تاکہ ہم اُس میں ہو کر خُدا کی راست بازی ہو جائیں “۔

اُس قربانی کی عظمت جو خُدا باپ نے اپنے بیٹے سے کروائی، اس نے یسوع مسیح کی فرمابرداری کی عظمت کو ظاہر کیا۔

یُوحنّا 12 باب 27 آیت: ” اب میری جان گھبراتی ہے۔ پس مَیں کیا کہُوں؟ اَے باپ! مُجھے اِس گھڑی سے بچا لیکن مَیں اِسی سبب سے تو اِس گھڑی کو پُہنچا ہُوں “۔

دونوں طرف، اِنسان کے لئے خُدا کی مُحبت آخر میں خود صلیب پر ثابت ہوئی۔ ہمیں موت سے بچانے کے لئے خُدا نے خطرناک مقصد کو چُنا: اُس نے ہماری موت کے لئے دُنیا میں ” گُناہ کی دوا ” پیش کی جو کہ اُس کے بیٹے یسوع مسیح ہیں ( سینٹ اگناشیس اینٹیوچ )۔

باپ اور بیٹا اِس مقصد، خواہش اور تڑپ کے اندر اِنسان کی مُحبت میں انتہائی تکلیف اُٹھانے کے لئے جُدا نہیں ہو سکتے تھے۔ خُدا کی خواہش تھی کہ وہ ایک تبدیلی قائم کرے تاکہ ہمیں ہمیشہ کی نجات ملے۔ وہ ہمیں اپنی ہمیشہ کی زندگی دینا چاہتا تھا، تاکہ ہم اُس کی خوشی کو منائیں اور وہ ہماری موت، ہماری مایوسی، ہماری دستبرداری کی تکلیف کو برداشت کرنا چاہتا تھا تاکہ وہ ہمارے ساتھ سب کچھ بانٹے۔ تاکہ وہ ہمیں آخرت تک اور بے اِنتہا مُحبت کرے۔ یسوع مسیح کی موت میں باپ کی مرضی ہے لیکن اُس کا آخری کلام نہیں۔ جب سے یسوع مسیح ہماری خاطر مرا ہے تب سے ہم اُس کی زندگی کے لئے اپنی موت کو تبدیل کر سکتے ہیں۔

خُداوند آپ سب کو برکت دے اور زندگی کی تمام مشکلات سے دور رکھے، اور آپ یوں ہی خُدا کے فضل سے اپنی زندگیوں میں ترقی کرتے جائیں۔ یسوع مسیح کے جلالی اور بابرکت نام میں آمین!

Facebook
Twitter
LinkedIn

RELATED ARTICLES